کیا کریں جا کے گلستاں میں ہم

مصحفی غلام ہمدانی

کیا کریں جا کے گلستاں میں ہم

مصحفی غلام ہمدانی

MORE BYمصحفی غلام ہمدانی

    کیا کریں جا کے گلستاں میں ہم

    ہیں بہ کنج قفس فغاں میں ہم

    جانتے آپ سے جدا تجھ کو

    کرتے گر فرق جسم و جاں میں ہم

    ہیں تجلیٔ ذات کے تیری

    ایک پردہ سا درمیاں میں ہم

    گل کا یہ رنگ ہے تو اب اک دن

    آگ رکھ دیں گے آشیاں میں ہم

    واں تغافل نے اپنا کام کیا

    یاں رہے مہر کے گماں میں ہم

    آسماں کو نشانہ کرتے ہیں

    تیر رکھتے ہیں جب کماں میں ہم

    مر کے نکلے قفس سے خوب ہوا

    تنگ آئے تھے اس مکاں میں ہم

    گر یہی آہ ہے تو دیکھو گے

    رخنے کر دیں گے آسماں میں ہم

    شاخ گل کے گلے سے لگ لگ کر

    روتے ہیں موسم خزاں میں ہم

    باغ تک جاتے ہاں اگر پاتے

    طاقت اس جسم ناتواں میں ہم

    مصحفیؔ عشق کر کے آخر کار

    خوب رسوا ہوئے جہاں میں ہم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے