aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کیا کیا دلوں کا خوف چھپانا پڑا ہمیں

جلیل عالیؔ

کیا کیا دلوں کا خوف چھپانا پڑا ہمیں

جلیل عالیؔ

MORE BYجلیل عالیؔ

    کیا کیا دلوں کا خوف چھپانا پڑا ہمیں

    خود ڈر گئے تو سب کو ڈرانا پڑا ہمیں

    اک دوسرے سے بچ کے نکلنا محال تھا

    اک دوسرے کو روند کے جانا پڑا ہمیں

    اپنے دیے کو چاند بتانے کے واسطے

    بستی کا ہر چراغ بجھانا پڑا ہمیں

    وحشی ہوا نے ایسے برہنہ کئے بدن

    اپنا لہو لباس بنانا پڑا ہمیں

    ذیلی حکایتوں میں سبھی لوگ کھو گئے

    قصہ تمام پھر سے سنانا پڑا ہمیں

    عالؔی انا پہ سانحے کیا کیا گزر گئے

    کس کس کی سمت ہاتھ بڑھانا پڑا ہمیں

    مأخذ:

    Ghazal Calendar-2015 (Pg. 10.04.2015)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے