کیا کیا دئے فریب ہر اک اعتبار نے

جمیل الدین عالی

کیا کیا دئے فریب ہر اک اعتبار نے

جمیل الدین عالی

MORE BYجمیل الدین عالی

    کیا کیا دئے فریب ہر اک اعتبار نے

    اپنا بنا دیا ہے ترے انتظار نے

    کیا جانے کتنے اہل طریقت کو آج تک

    گمراہ کر دیا ہے ترے رہ گزار نے

    کچھ ان کی جستجو ہے نہ کچھ اپنی گفتگو

    یہ کیا بنا دیا ستم روزگار نے

    ہاں اے نگاہ گرم نہ کر مختصر حیات

    ہم کو ہزار بوجھ ابھی ہیں اتارنے

    الجھے ہوئے ہیں گیسوئے جاناں میں آج تک

    عالیؔ چلے تھے کاکل گیتی سنوارنے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY