کیا مسرت ہے پوچھئے ہم سے

آسی رام نگری

کیا مسرت ہے پوچھئے ہم سے

آسی رام نگری

MORE BYآسی رام نگری

    کیا مسرت ہے پوچھئے ہم سے

    ہے عبارت ہر اک خوشی غم سے

    عرق آلود آپ کا چہرہ

    ہو دھلا پھول جیسے شبنم سے

    ضبط گریہ سے راز غم تھا چھپا

    کھل گیا آج چشم پر نم سے

    درد دل کا نہیں کوئی درماں

    زخم کیا مندمل ہو مرہم سے

    در حقیقت قریب رہتے ہیں

    وہ بظاہر ہی دور ہیں ہم سے

    جب ازل سے خطا ضمیر میں ہے

    کیوں خطا ہو نہ ابن آدم سے

    مأخذ :
    • کتاب : Harf Harf Khowab (Pg. 59)
    • Author : asi ramnagari
    • مطبع : Nasim Pathara Po. Moghalsarai (Varansi) (1992)
    • اشاعت : 1992

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY