کیوں ہو نہ گر کے کاسۂ تدبیر پاش پاش

زیبا

کیوں ہو نہ گر کے کاسۂ تدبیر پاش پاش

زیبا

MORE BYزیبا

    کیوں ہو نہ گر کے کاسۂ تدبیر پاش پاش

    ہے سنگ غم سے شیشۂ تقدیر پاش پاش

    ہے خون بے گنہ سے جگر ریش تیغ بھی

    جوہر نہیں یہ ہے تن شمشیر پاش پاش

    تیر نگہ نے دل مرا غربال کر دیا

    زخموں سے ہو گیا تن نخچیر پاش پاش

    تیغ زبان یار سے مجروح ہے جگر

    ہوتا ہے دل مرا دم تقریر پاش پاش

    اے تیغ کلک لکھ وہ مضامین طعنیہ

    دل حاسدوں کے ہوں دم تحریر پاش پاش

    زیباؔ غزل تو تم نے کہی اس زمیں میں خوب

    ثابت ہر اک جگہ ہے بہ تدبیر پاش پاش

    مآخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY