لالہ زاروں میں زرد پھول ہوں میں

عابد مناوری

لالہ زاروں میں زرد پھول ہوں میں

عابد مناوری

MORE BYعابد مناوری

    لالہ زاروں میں زرد پھول ہوں میں

    فصل گل ہے مگر ملول ہوں میں

    چاند تاروں کو رشک ہے مجھ پر

    تیرے قدموں کی صرف دھول ہوں میں

    کیوں مجھے سنگسار کرتے ہو

    کب یہ میں نے کہا رسول ہوں میں

    نور سر مستیٔ ابد ہوں مگر

    مے شفاف میں حلول ہوں میں

    رنج و غم کیوں نہ میری قدر کریں

    بے غرض اور با اصول ہوں میں

    چاندنی کیا پیام لائی ہے

    آج کچھ اور بھی ملول ہوں میں

    سب کے حق میں ہوں شاخ گل لیکن

    صرف اپنے لیے ببول ہوں میں

    مجھ پہ ہی یورش الم کیوں ہے

    جب حقیقت میں تیری بھول ہوں میں

    غم ہجراں ہی وہ سہی عابدؔ

    کوئی تو ہے جسے قبول ہوں میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY