لہو میں آج کل حدت بہت مشکل سے آتی ہے

مسعود حساس

لہو میں آج کل حدت بہت مشکل سے آتی ہے

مسعود حساس

MORE BYمسعود حساس

    لہو میں آج کل حدت بہت مشکل سے آتی ہے

    کسی کے درد کی چاہت بہت مشکل سے آتی ہے

    یہ سچ ہے جرأت رندانہ سے قسمت بدلتی ہے

    مگر ہر شخص میں جرأت بہت مشکل سے آتی ہے

    کہ اس کے واسطے نیزے پہ سر کو رکھنا پڑتا ہے

    میاں حق گوئی کی طاقت بہت مشکل سے آتی ہے

    غریبی کو تو مل ہی جاتی ہے دو وقت کی روٹی

    مگر دولت کے گھر راحت بہت مشکل سے آتی ہے

    لہو کا گھونٹ بھرتے ہیں تبھی چشمہ ابلتا ہے

    کسی کے شعر میں جدت بہت مشکل سے آتی ہے

    یہاں پر چند سکوں کے عوض ایمان بکتا ہے

    دلوں میں دین کی چاہت بہت مشکل سے آتی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY