لیتا ہوں تیرا نام ہر اک نام سے پہلے

نظر برنی

لیتا ہوں تیرا نام ہر اک نام سے پہلے

نظر برنی

MORE BYنظر برنی

    لیتا ہوں تیرا نام ہر اک نام سے پہلے

    کچھ ذکر نہیں کرتا ہوں اس کام سے پہلے

    منزل کی صعوبت کبھی آزار نہ ہوگی

    میں نام ترا لیتا ہوں ہر گام سے پہلے

    ہے عشق کا آغاز ہی انجام کا حاصل

    انجام نظر آتا ہے انجام سے پہلے

    میں خود ہی چلا جاؤں گا میخانے سے اٹھ کر

    ساقی سے جو لڑ جائے نظر جام سے پہلے

    رندان بلا نوش کی ہے بات ہی کچھ اور

    مے پیتے نہیں شیخ کبھی شام سے پہلے

    وحشت میں زمانہ مجھے بدنام نہ کرتا

    ہو جاتا رفو چاک جو الزام سے پہلے

    کہتے ہیں وہی آپ جو کہتا ہے زمانہ

    کچھ اور بھی کہہ لیجئے بدنام سے پہلے

    یہ ان کی عنایت سے مرا حال ہوا ہے

    کچھ وار عطا کرتے ہیں انعام سے پہلے

    کہتا ہوں غزل ان کے تصور میں نظرؔ جب

    عالم ہی عجب ہوتا ہے الہام سے پہلے

    مآخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY