لوگ کرتے ہیں فقط وقت گزاری پاگل

فوزیہ رباب

لوگ کرتے ہیں فقط وقت گزاری پاگل

فوزیہ رباب

MORE BYفوزیہ رباب

    لوگ کرتے ہیں فقط وقت گزاری پاگل

    بات کرتا ہے یہاں کون ہماری پاگل

    اس نے اک بار کہا کوئی نہیں تم جیسا

    تب سے میں لگنے لگی خود کو بھی پیاری پاگل

    وہ بھی ہنس ہنس کے کیا کرتا تھا باتیں اور میں

    اس کی باتوں میں چلی آئی بچاری پاگل

    ایک مدت سے تری راہ میں آ بیٹھی ہے

    عشق میں تیرے ہوئی راجکماری پاگل

    میں نے پوچھا کہ کوئی مجھ سے زیادہ ہے حسیں

    آئنہ ہنس کے یہ بولا اری جا ری پاگل

    یوں نہیں ہے کہ فقط نین ہوئے ہیں میرے

    دیکھ کر تجھ کو ہوئی ساری کی ساری پاگل

    اس نے پوچھا کہ مری ہو ناں تو پھر میں نے کہا

    ہاں تمہاری میں تمہاری میں تمہاری پاگل

    میں ربابؔ اس سے زیادہ تجھے اب کیا دیتی

    زندگی میں نے ترے نام پہ واری پاگل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY