لوگ ٹوٹ جاتے ہیں ایک گھر بنانے میں

بشیر بدر

لوگ ٹوٹ جاتے ہیں ایک گھر بنانے میں

بشیر بدر

MORE BYبشیر بدر

    لوگ ٹوٹ جاتے ہیں ایک گھر بنانے میں

    تم ترس نہیں کھاتے بستیاں جلانے میں

    اور جام ٹوٹیں گے اس شراب خانے میں

    موسموں کے آنے میں موسموں کے جانے میں

    ہر دھڑکتے پتھر کو لوگ دل سمجھتے ہیں

    عمریں بیت جاتی ہیں دل کو دل بنانے میں

    فاختہ کی مجبوری یہ بھی کہہ نہیں سکتی

    کون سانپ رکھتا ہے اس کے آشیانے میں

    دوسری کوئی لڑکی زندگی میں آئے گی

    کتنی دیر لگتی ہے اس کو بھول جانے میں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ظفر اقبال

    ظفر اقبال

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY