لٹنے والوں کا مددگار نہیں ہے کوئی

جہانزیب ساحر

لٹنے والوں کا مددگار نہیں ہے کوئی

جہانزیب ساحر

MORE BYجہانزیب ساحر

    لٹنے والوں کا مددگار نہیں ہے کوئی

    اس قبیلے کا بھی سردار نہیں ہے کوئی

    میں وہ محروم تمنا ہوں کہ جس کی خاطر

    بھری بستی میں عزادار نہیں ہے کوئی

    شاہ زادی تری آنکھوں میں یہ دہشت کیسی

    پھول ہیں ہاتھ میں تلوار نہیں ہے کوئی

    دل کسی وقت کسی پر بھی فدا ہو جائے

    یہ وہ کشتی ہے کہ پتوار نہیں ہے کوئی

    آنکھ میں اشک نہیں ہیں تو یہی لگتا ہے

    اک ستارا بھی نمودار نہیں ہے کوئی

    مجھ کو اس بات سے آتا ہے بہت خوف یہاں

    سب فرشتے ہیں گنہ گار نہیں ہے کوئی

    دیکھ یہ زخم تراشے ہوئے لگتے ہیں تجھے

    تو سمجھتا ہے مرا یار نہیں ہے کوئی

    اک خلا اور بہت گہرا خلا ہے ساحرؔ

    دیکھ آیا ہوں میں اس پار نہیں ہے کوئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY