مانوس ہو چکے ہیں ترے آستاں سے ہم

نسیم شاہجہانپوری

مانوس ہو چکے ہیں ترے آستاں سے ہم

نسیم شاہجہانپوری

MORE BYنسیم شاہجہانپوری

    مانوس ہو چکے ہیں ترے آستاں سے ہم

    اب زندگی بدل کے اٹھیں گے یہاں سے ہم

    تنہائیاں دلوں کی بھلا کس طرح مٹیں

    کچھ اجنبی سے آپ ہیں کچھ بدگماں سے ہم

    اب عالم سکوت ہی روداد عشق ہے

    کچھ عرض حال کر نہیں سکتے زباں سے ہم

    ہے راز بحر عشق عجب حیرت آفریں

    یہ دیکھنا ہے ڈوب کے ابھریں کہاں سے ہم

    برباد بار بار نشیمن ہوا مگر

    غافل ہیں آج تک نگہ باغباں سے ہم

    ملتا کسی نظر کا سہارا اگر ہمیں

    تھکتے نہ یوں حیات کے بار گراں سے ہم

    حاصل ہوا وہ لطف اسیری میں اے نسیمؔ

    تا عمر بے نیاز رہے آشیاں سے ہم

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    مانوس ہو چکے ہیں ترے آستاں سے ہم نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY