ماتھے پہ پڑی زلف گرہ گیر ہلا دی

آر پی شوخ

ماتھے پہ پڑی زلف گرہ گیر ہلا دی

آر پی شوخ

MORE BYآر پی شوخ

    ماتھے پہ پڑی زلف گرہ گیر ہلا دی

    کیوں تم نے دل خفتہ کی زنجیر ہلا دی

    ویسے تو مرے عشق کا ہر نقش حسیں تھا

    جب درد نے کھینچی تو یہ تصویر ہلا دی

    خط بھیج دیا کاٹ کے پیمان ملاقات

    یہ کون ہے جس نے تری تحریر ہلا دی

    یوں ہی نہ سمجھ اہل محبت کے جنوں کو

    کم بخت نے جب چاہا ہے تقدیر ہلا دی

    وہ زلزلہ گو روز ہلا دیتا تھا دل کو

    اس بار مگر ساری ہی تعمیر ہلا دی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے