aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

مہک کردار کی آتی رہی ہے

حیات لکھنوی

مہک کردار کی آتی رہی ہے

حیات لکھنوی

MORE BYحیات لکھنوی

    مہک کردار کی آتی رہی ہے

    صداقت پھول برساتی رہی ہے

    ستاروں نے کہی تیری کہانی

    سہانی شب تجھے گاتی رہی

    نظر کس زاویے پہ جا کے ٹھہرے

    قیامت ہر ادا ڈھاتی رہی ہے

    جہاں اپنا لہو بوتا رہا ہوں

    وہ بستی مجھ سے کتراتی رہی ہے

    سلگتی چیختی پیاسی زمیں پر

    گھٹا گھنگھور بھی چھاتی رہی ہے

    جو میرے سامنے ہر دم رہا ہے

    اسی کی یاد بھی آتی رہی ہے

    حیاتؔ اس سمت سے آتی ہوا بھی

    پیام زندگی لاتی رہی ہے

    مأخذ:

    Rooh-e-Ghazal,Pachas Sala Intekhab (Pg. 380)

      • اشاعت: 1993
      • ناشر: انجمن روح ادب، الہ آباد
      • سن اشاعت: 1993

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے