مے ہو ابر و ہوا نہیں تو نہ ہو

شیخ ظہور الدین حاتم

مے ہو ابر و ہوا نہیں تو نہ ہو

شیخ ظہور الدین حاتم

MORE BYشیخ ظہور الدین حاتم

    مے ہو ابر و ہوا نہیں تو نہ ہو

    درد ہو گر دوا نہیں تو نہ ہو

    ہم تو ہیں آشنا ترے ظالم

    تو اگر آشنا نہیں تو نہ ہو

    دل ہے وابستہ تیرے دامن سے

    دست میرا رسا نہیں تو نہ ہو

    ہم تو تیری جفا کے بندے ہیں

    تجھ میں رسم وفا نہیں تو نہ ہو

    آستاں پر تو گر رہے ہیں اگر

    تیری مجلس میں جا نہیں تو نہ ہو

    ہم تو ہیں صاف، بد گماں میرے

    تیرے دل میں صفا نہیں تو نہ ہو

    دل کو اکسیر ہے گی تیری نگاہ

    ہوس کیمیا نہیں تو نہ ہو

    ہم تو حاشا نہیں کسی سے برے

    کوئی ہم سے بھلا نہیں تو نہ ہو

    طالب وصل کب تلک رہیے

    ہو تو ہو جائے یا نہیں تو نہ ہو

    حاتمؔ اب کس کی مجھ کو پروا ہے

    کوئی مرا جز خدا نہیں تو نہ ہو

    مأخذ :
    • کتاب : Diwan-e-Zadah (Pg. 266)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY