میں اگر آپ سے جاؤں تو قرار آ جائے

مومن خاں مومن

میں اگر آپ سے جاؤں تو قرار آ جائے

مومن خاں مومن

MORE BYمومن خاں مومن

    میں اگر آپ سے جاؤں تو قرار آ جائے

    پر یہ ڈرتا ہوں کہ ایسا نہ ہو یار آ جائے

    باندھو اب چارہ گرو چلے کہ وہ بھی شاید

    وصل دشمن کے لیے سوئے مزار آ جائے

    کر ذرا اور بھی اے جوش جنوں جنوں خوار و ذلیل

    مجھ سے ایسا ہو کہ ناصح کو بھی عار آ جائے

    نام بدبختی عشاق خزاں ہے بلبل

    تو اگر نکلے چمن سے تو بہار آ جائے

    جیتے جی غیر کو ہو آتش دوزخ کا عذاب

    گر مری نعش پہ وہ شعلہ عذار آ جائے

    کلفت ہجر کو کیا روؤں ترے سامنے میں

    دل جو خالی ہو تو آنکھوں میں غبار آ جائے

    محو دل دار ہوں کس طرح نہ ہوں دشمن جاں

    مجھ پہ جب ناصح بیدرد کو پیار آ جائے

    ٹھہر جا جوش تپش ہے تو تڑپنا لیکن

    چارہ سازوں میں ذرا دم دل زار آ جائے

    حسن انجام کا مومنؔ مرے بارے ہے خیال

    یعنی کہتا ہے وہ کافر کہ تو مارا جائے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY