میں جس ارادے سے جا رہی ہوں اسی ارادے سے لڑ پڑوں گی

کومل جوئیہ

میں جس ارادے سے جا رہی ہوں اسی ارادے سے لڑ پڑوں گی

کومل جوئیہ

MORE BYکومل جوئیہ

    میں جس ارادے سے جا رہی ہوں اسی ارادے سے لڑ پڑوں گی

    مرے سپاہی کو کچھ ہوا تو میں شاہزادے سے لڑ پڑوں گی

    یہ کھیل شاہوں کے مرتبے کا ہدف بنیں گے ہمارے مہرے

    میں بے بسی میں شکست کھائے ہوئے پیادے سے لڑ پڑوں گی

    میں اپنی بستی کی کچی گلیوں سے عشق کرتی ہوں یاد رکھنا

    اگر جو اچھا برا کہے گا امیر زادے سے لڑ پڑوں گی

    اسیر-نقش و نگار مجھ سے نہیں سنبھلتا یہ چاک ہستی

    میں تھک گئی تو بکھرتی مٹی سے اور برادے سے لڑ پڑوں گی

    یہ صبر کب تک نبھائے جاؤں میں خود سے نظریں چرائے جاؤں

    جو شام ہجراں نے جان کھائی ہر ایک وعدے سے لڑ پڑوں گی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY