میں کیا ہوں کون ہوں یہ بھی خبر نہیں مجھ کو (ردیف .. ن)

ہادی مچھلی شہری

میں کیا ہوں کون ہوں یہ بھی خبر نہیں مجھ کو (ردیف .. ن)

ہادی مچھلی شہری

MORE BYہادی مچھلی شہری

    میں کیا ہوں کون ہوں یہ بھی خبر نہیں مجھ کو

    وہ اس طرح مری ہستی پہ چھائے جاتے ہیں

    خیال ہی ابھی آیا تھا کوئے جاناں کا

    یہ حال ہے کہ قدم ڈگمگائے جاتے ہیں

    وہ پوچھتے ہیں دل مبتلا کا حال اور ہم

    جواب میں فقط آنسو بہائے جاتے ہیں

    کہاں ہے شوق بتا غیرت کشش تیری

    وہ میری خاک سے دامن بچائے جاتے ہیں

    مٹا رہے ہیں وہ کیوں داغہائے دل ہادیؔ

    چراغ کیوں یہ جلا کر بجھائے جاتے ہیں

    مأخذ :
    • کتاب : Jadeed Shora-e-Urdu (Pg. 523)
    • Author : Dr. Abdul Wahid
    • مطبع : Feroz sons Printers Publishers and Stationers

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے