میں روایت ہوں ایک بھولی ہوئی (ردیف .. ے)

شائستہ یوسف

میں روایت ہوں ایک بھولی ہوئی (ردیف .. ے)

شائستہ یوسف

MORE BYشائستہ یوسف

    میں روایت ہوں ایک بھولی ہوئی

    اور تو جدتوں میں رہتا ہے

    میری آنکھیں سوال کرتی ہیں

    کیا خدا منظروں میں رہتا ہے

    ساعتیں رقص کر رہی ہیں مگر

    میرا دل الجھنوں میں رہتا ہے

    پرچم جنگ جھک گیا لیکن

    وسوسہ سا دلوں میں رہتا ہے

    گو چراغاں کیے گئے خیمے

    پر اندھیرا دلوں میں رہتا ہے

    آؤ موجوں سے پوچھ کر آئیں

    چاند کن ساحلوں میں رہتا ہے

    RECITATIONS

    شائستہ یوسف

    شائستہ یوسف

    شائستہ یوسف

    میں روایت ہوں ایک بھولی ہوئی (ردیف .. ے) شائستہ یوسف

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY