میں سو رہا تھا اور کوئی بیدار مجھ میں تھا

حمایت علی شاعر

میں سو رہا تھا اور کوئی بیدار مجھ میں تھا

حمایت علی شاعر

MORE BYحمایت علی شاعر

    میں سو رہا تھا اور کوئی بیدار مجھ میں تھا

    شاید ابھی تلک مرا پندار مجھ میں تھا

    وہ کج ادا سہی مری پہچان بھی تھا وہ

    اپنے نشے میں مست جو فن کار مجھ میں تھا

    میں خود کو بھولتا بھی تو کس طرح بھولتا

    اک شخص تھا کہ آئنہ بردار مجھ میں تھا

    شاید اسی سبب سے توازن سا مجھ میں ہے

    اک محتسب لئے ہوئے تلوار مجھ میں تھا

    اپنے کسی عمل پہ ندامت نہیں مجھے

    تھا نیک دل بہت جو گنہ گار مجھ میں تھا

    مأخذ :
    • کتاب : Junoon (Pg. 102)
    • Author : Naseem Muqri
    • مطبع : Naseem Muqri (1990)
    • اشاعت : 1990

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY