میرا جنوں ہی اصل میں صحرا پرست تھا

اظہار اثر

میرا جنوں ہی اصل میں صحرا پرست تھا

اظہار اثر

MORE BYاظہار اثر

    میرا جنوں ہی اصل میں صحرا پرست تھا

    ورنہ بہار کا بھی یہاں بندوبست تھا

    آیا شعور زیست تو افشا ہوا یہ راز

    تیرے کمال فن کی میں پہلی شکست تھا

    اوروں نے کر لیے تھے اندھیروں سے فیصلے

    اک میں ہی سارے شہر میں سورج بدست تھا

    اک چیختے سکوت نے چونکا دیا مجھے

    میں ورنہ اپنے حال میں مدت سے مست تھا

    آئینہ جب دکھایا تو یہ راز بھی کھلا

    جتنا بھی جو بلند تھا اتنا ہی پست تھا

    تخلیق کل کے لمحۂ اول میں اے اثرؔ

    میں زندگی کی پہلی ہمک پہلی جست تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY