مرے دل کی راکھ کرید مت اسے مسکرا کے ہوا نہ دے

بشیر بدر

مرے دل کی راکھ کرید مت اسے مسکرا کے ہوا نہ دے

بشیر بدر

MORE BY بشیر بدر

    مرے دل کی راکھ کرید مت اسے مسکرا کے ہوا نہ دے

    یہ چراغ پھر بھی چراغ ہے کہیں تیرا ہاتھ جلا نہ دے

    نئے دور کے نئے خواب ہیں نئے موسموں کے گلاب ہیں

    یہ محبتوں کے چراغ ہیں انہیں نفرتوں کی ہوا نہ دے

    ذرا دیکھ چاند کی پتیوں نے بکھر بکھر کے تمام شب

    ترا نام لکھا ہے ریت پر کوئی لہر آ کے مٹا نہ دے

    میں اداسیاں نہ سجا سکوں کبھی جسم و جاں کے مزار پر

    نہ دیے جلیں مری آنکھ میں مجھے اتنی سخت سزا نہ دے

    مرے ساتھ چلنے کے شوق میں بڑی دھوپ سر پہ اٹھائے گا

    ترا ناک نقشہ ہے موم کا کہیں غم کی آگ گھلا نہ دے

    میں غزل کی شبنمی آنکھ سے یہ دکھوں کے پھول چنا کروں

    مری سلطنت مرا فن رہے مجھے تاج و تخت خدا نہ دے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    Urdu Studio

    Urdu Studio

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY