مرے جیسی تمہیں ملنی نہیں ہے

عین نقوی

مرے جیسی تمہیں ملنی نہیں ہے

عین نقوی

MORE BYعین نقوی

    مرے جیسی تمہیں ملنی نہیں ہے

    مگر کوئی زبردستی نہیں ہے

    یہ دل ہے آپ کا آفس نہیں جی

    یہاں پر آپ کی چلتی نہیں ہے

    میں جچتی ہوں اسے ہر زاویے سے

    وہ میرا ہے تو بس یوں ہی نہیں ہے

    وہ خوشبو مختلف ہے خوشبوؤں سے

    وہ سب میں رہ کے سب جیسی نہیں ہے

    ہوائی فائرنگ میں ضائع کر دیں

    ضرورت ہے تو اک گولی نہیں ہے

    ترے خوابوں میں آنے والی لڑکی

    کسی کی باتوں میں آتی نہیں ہے

    کوئی پوچھے مرا تو اس سے کہنا

    سراسر پیار ہے پیاری نہیں ہے

    جسے تھی آرزو پھر جی اٹھوں میں

    اسے اب مجھ میں دلچسپی نہیں ہے

    نہیں روتی تمہارا نام لے کر

    وہ لڑکی اب وہی لڑکی نہیں ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY