مرے سخن پہ اک احسان اب کے سال تو کر

شہرام سرمدی

مرے سخن پہ اک احسان اب کے سال تو کر

شہرام سرمدی

MORE BYشہرام سرمدی

    مرے سخن پہ اک احسان اب کے سال تو کر

    تو مجھ کو درد کی دولت سے مالا مال تو کر

    دل عزیز کو تیرے سپرد کر دیا ہے

    تو دل لگا کے ذرا اس کی دیکھ بھال تو کر

    کئی دنوں سے میں اک بات کہنا چاہتا ہوں

    تو لب ہلا تو سہی ہاں کوئی سوال تو کر

    میں اجنبی کی طرح تیرے پاس سے گزرا

    یہ کیا تعلق خاطر ہے کچھ خیال تو کر

    میں چاہ کر بھی ترے ساتھ رہ نہیں پاؤں

    تو میرے غم مری مجبوری پر ملال تو کر

    مأخذ :
    • کتاب : Na Mau'ud (Pg. 169)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY