محبت کرنے والے کم نہ ہوں گے

حفیظ ہوشیارپوری

محبت کرنے والے کم نہ ہوں گے

حفیظ ہوشیارپوری

MORE BY حفیظ ہوشیارپوری

    محبت کرنے والے کم نہ ہوں گے

    تری محفل میں لیکن ہم نہ ہوں گے

    those that love you will not shrink

    But I will be gone I think

    میں اکثر سوچتا ہوں پھول کب تک

    شریک گریۂ شبنم نہ ہوں گے

    ----

    ----

    ذرا دیر آشنا چشم کرم ہے

    ستم ہی عشق میں پیہم نہ ہوں گے

    ----

    ----

    دلوں کی الجھنیں بڑھتی رہیں گی

    اگر کچھ مشورے باہم نہ ہوں گے

    hearts confusion will result

    if mutually we don’t consult

    زمانے بھر کے غم یا اک ترا غم

    یہ غم ہوگا تو کتنے غم نہ ہوں گے

    your sorrow or a world of pain

    if this be there none will remain

    کہوں بے درد کیوں اہل جہاں کو

    وہ میرے حال سے محرم نہ ہوں گے

    ----

    ----

    ہمارے دل میں سیل گریہ ہوگا

    اگر با دیدۂ پر نم نہ ہوں گے

    ----

    ----

    اگر تو اتفاقاً مل بھی جائے

    تری فرقت کے صدمے کم نہ ہوں گے

    even if perchance we meet

    my ache for you will not deplete

    حفیظؔ ان سے میں جتنا بد گماں ہوں

    وہ مجھ سے اس قدر برہم نہ ہوں گے

    when so upset with her be

    will she not be annoyed with me

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    عابد علی بیگ

    عابد علی بیگ

    انیتا سنگھوی

    انیتا سنگھوی

    اعجاز حسین ہزراوی

    اعجاز حسین ہزراوی

    فریدہ خانم

    فریدہ خانم

    اقبال بانو

    اقبال بانو

    RECITATIONS

    مہدی حسن

    مہدی حسن

    مہدی حسن

    محبت کرنے والے کم نہ ہوں گے مہدی حسن

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY