محبت پر نہ بھولو محبت بے کسی ہے

محبوب خزاں

محبت پر نہ بھولو محبت بے کسی ہے

محبوب خزاں

MORE BYمحبوب خزاں

    محبت پر نہ بھولو محبت بے کسی ہے

    سکون سرو و سنبل سب اپنی سادگی ہے

    کہاں وہ بے خودی تھی کہ خود ہم بے خبر تھے

    اب اتنی بیکلی ہے کہ دنیا جانتی ہے

    کہو مجھ سے کہ دل میں نہیں کوئی شکایت

    طبیعت منچلی ہے بہانے ڈھونڈتی ہے

    نمک سا گفتگو میں انوکھی مسکراہٹ

    بدن پر دھیرے دھیرے قیامت آ رہی ہے

    تجھے کیسے دکھاؤں یہ راتیں یہ اجالے

    جوانی سو گئی ہے محبت جاگتی ہے

    اسی کا شکوہ ہر دم اسی کا ذکر سب سے

    اگر یہ دشمنی ہے تو اچھی دشمنی ہے

    تھکن ہے جاں فزا سی برستی ہے اداسی

    ستارے کہہ رہے ہیں کہ منزل آ گئی ہے

    پلٹ کر یوں نہ دیکھو امڈتے بادلوں سے

    بہار بے خزاں بھی سرکتی چاندنی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے