ممکن نہیں کہ بزم طرب پھر سجا سکوں

جگن ناتھ آزاد

ممکن نہیں کہ بزم طرب پھر سجا سکوں

جگن ناتھ آزاد

MORE BYجگن ناتھ آزاد

    ممکن نہیں کہ بزم طرب پھر سجا سکوں

    اب یہ بھی ہے بہت کہ تمہیں یاد آ سکوں

    یہ کیا طلسم ہے کہ تری جلوہ گاہ سے

    نزدیک آ سکوں نہ کہیں دور جا سکوں

    ذوق نگاہ اور بہاروں کے درمیاں

    پردے گرے ہیں وہ کہ نہ جن کو اٹھا سکوں

    کس طرح کر سکو گے بہاروں کو مطمئن

    اہل چمن جو میں بھی چمن میں نہ آ سکوں

    تیری حسیں فضا میں مرے اے نئے وطن

    ایسا بھی ہے کوئی جسے اپنا بنا سکوں

    آزادؔ ساز دل پہ ہیں رقصاں وہ زمزمے

    خود سن سکوں مگر نہ کسی کو سنا سکوں

    مآخذ
    • کتاب : Noquush (Pg. B-356 E370)
    • مطبع : Nuqoosh Press Lahore (May June 1954)
    • اشاعت : May June 1954

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY