نہ سہی گر انہیں خیال نہیں

حسرتؔ موہانی

نہ سہی گر انہیں خیال نہیں

حسرتؔ موہانی

MORE BY حسرتؔ موہانی

    نہ سہی گر انہیں خیال نہیں

    کہ ہمارا بھی اب وہ حال نہیں

    یاد انہیں وعدۂ وصال نہیں

    کب کیا تھا یہی خیال نہیں

    ایسے بگڑے وہ سن کے شوق کی بات

    آج تک ہم سے بول چال نہیں

    مجھ کو اب غم یہ ہے کہ بعد مرے

    خاطر یار بے ملال نہیں

    عفو حق کا ہے میکشوں پہ نزول

    ریزش ابر برشگال نہیں

    ہم پہ کیوں عرض حال دل پہ عتاب

    ایلچی کو کہیں زوال نہیں

    سن کے مجھ سے وہ خواہش پابوس

    ہنس کے کہنے لگے مجال نہیں

    دل کو ہے یاد شوق کا وہ ہنر

    جس سے بڑھ کر کوئی کمال نہیں

    آپ نادم نہ ہوں کہ حسرتؔ سے

    شکوۂ غم کا احتمال نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY