نئی بارش کی رم جھم میں لباس غم تو بدلے گا

مظہر امام

نئی بارش کی رم جھم میں لباس غم تو بدلے گا

مظہر امام

MORE BY مظہر امام

    نئی بارش کی رم جھم میں لباس غم تو بدلے گا

    وہی رسم چمن ہوگی مگر موسم تو بدلے گا

    وہ قہر شاہ خاور ہو کہ زہر باد صرصر ہو

    کسی صورت مزاج نازک شبنم تو بدلے گا

    مسیحاؤں نے کچھ تازہ دوائیں لا کے رکھی ہیں

    نئے زخم آئیں گے اب بھی مگر مرہم تو بدلے گا

    کفن ریشم کے مقتولوں کو اب پہنائے جائیں گے

    عزاداروں کا طرز گریہ و ماتم تو بدلے گا

    نئی ساقی گری کا جشن فیاضی مبارک ہو

    وہی ہوں گے ایاغ و جام لیکن سم تو بدلے گا

    نئی ناوک زنی ہوگی مگر اتنا بھی کیا کم ہے

    کہ جس عالم میں ہم رہتے ہیں وہ عالم تو بدلے گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites