نیا اک رشتہ پیدا کیوں کریں ہم

جون ایلیا

نیا اک رشتہ پیدا کیوں کریں ہم

جون ایلیا

MORE BY جون ایلیا

    نیا اک رشتہ پیدا کیوں کریں ہم

    بچھڑنا ہے تو جھگڑا کیوں کریں ہم

    خموشی سے ادا ہو رسم دوری

    کوئی ہنگامہ برپا کیوں کریں ہم

    یہ کافی ہے کہ ہم دشمن نہیں ہیں

    وفا داری کا دعویٰ کیوں کریں ہم

    وفا اخلاص قربانی محبت

    اب ان لفظوں کا پیچھا کیوں کریں ہم

    ہماری ہی تمنا کیوں کرو تم

    تمہاری ہی تمنا کیوں کریں ہم

    کیا تھا عہد جب لمحوں میں ہم نے

    تو ساری عمر ایفا کیوں کریں ہم

    نہیں دنیا کو جب پروا ہماری

    تو پھر دنیا کی پروا کیوں کریں ہم

    یہ بستی ہے مسلمانوں کی بستی

    یہاں کار مسیحا کیوں کریں ہم

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    جون ایلیا

    جون ایلیا

    مآخذ:

    • کتاب : shayad (Pg. 125)
    • Author : jaun eliya
    • مطبع : kitabi duniya (2008)
    • اشاعت : 2008

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY