پھل جائے محبت تو محبت ہے محبت

منظر لکھنوی

پھل جائے محبت تو محبت ہے محبت

منظر لکھنوی

MORE BYمنظر لکھنوی

    پھل جائے محبت تو محبت ہے محبت

    اور راس نہ آئے تو مصیبت ہے محبت

    سرمایۂ دیوانۂ الفت ہے محبت

    اے الٹے ہوئے دل تری قیمت ہے محبت

    ہے ہم ہی تلک خیر غنیمت ہے محبت

    ہو جائے انہیں بھی تو قیامت ہے محبت

    رو رو کے وہ پوچھیں گے مری آنکھ سے آنسو

    آئیں گے وہ دن بھی جو سلامت ہے محبت

    بدنام کیا لاکھ تجھے خود غرضوں نے

    پھر بھی تری دنیا کو ضرورت ہے محبت

    دنیا کہے کچھ ہے مگر ایمان کی یہ بات

    ہونے کی طرح ہو تو عبادت ہے محبت

    ہے جن سے ان آنکھوں کی قسم کھاتا ہوں منظرؔ

    میرے لیے پروانۂ جنت ہے محبت

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY