جا رہی ہے بہار پھولوں کی

بانو طاہرہ سعید

جا رہی ہے بہار پھولوں کی

بانو طاہرہ سعید

MORE BYبانو طاہرہ سعید

    جا رہی ہے بہار پھولوں کی

    ہے قبا تار تار پھولوں کی

    سینچئے پہلے خون دل سے چمن

    دیکھیے پھر بہار پھولوں کی

    ان کے ہونٹوں پہ مسکراتی ہے

    مسکراہٹ ہزار پھولوں کی

    کس قدر تلخ یہ حقیقت ہے

    ہم نشینیٔ خار پھولوں کی

    جس کو کہتے ہیں ہم بہار و خزاں

    وہ تو ہے جیت ہار پھولوں کی

    سچ بتا کیوں خموش ہے بلبل

    اے صبا راز دار پھولوں کی

    ہے خزاں میں بھی جیسے آوارہ

    نکہت بے قرار پھولوں کی

    کیا قفس میں بھی گل کھلائے گی

    یاد یوں بار بار پھولوں کی

    طاہرہؔ آج تیرے شعروں میں

    ہے مہک بے شمار پھولوں کی

    مأخذ :

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY