پھول کھلتے ہیں تالاب میں تارا ہوتا

رمزی آثم

پھول کھلتے ہیں تالاب میں تارا ہوتا

رمزی آثم

MORE BYرمزی آثم

    پھول کھلتے ہیں تالاب میں تارا ہوتا

    کوئی منظر تو مری آنکھ میں پیارا ہوتا

    ہم پلٹ آئے مسافت کو مکمل کر کے

    اور بھی چلتے اگر ساتھ تمہارا ہوتا

    ہم محبت کو سمندر کی طرح جانتے ہیں

    کود ہی جاتے اگر کوئی کنارہ ہوتا

    ایک ناکام محبت ہی ہمیں کافی ہے

    ہم دوبارہ بھی اگر کرتے خسارہ ہوتا

    کتنی لہریں ہمیں سینے سے لگانے آتیں

    کوئی کنکر ہی اگر جھیل میں مارا ہوتا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY