پھول کیا چیز ہے کلی کیا ہے

سید غافر رضوی فلک چھولسی

پھول کیا چیز ہے کلی کیا ہے

سید غافر رضوی فلک چھولسی

MORE BYسید غافر رضوی فلک چھولسی

    پھول کیا چیز ہے کلی کیا ہے

    بن تمہارے یہ زندگی کیا ہے

    اجڑے دل سے ذرا کوئی پوچھے

    سونے صحرا میں دل لگی کیا ہے

    وہ جو نوحہ پڑھا کرے بلبل

    کیا بتائے گا نغمگی کیا ہے

    میری گفتار صدق پیہم ہے

    پھر یہ سورج کی روشنی کیا ہے

    گر تردد ہو آزما دیکھو

    ہاتھ کنگن کو آرسی کیا ہے

    میری آنکھوں میں پڑ گئے حلقے

    کوئی پوچھے کہ دل لگی کیا ہے

    پردہ چہرہ سے تھوڑا سرکا دو

    ہم بھی دیکھیں کہ مے کشی کیا ہے

    ایک پرزہ سہی مگر لکھ دو

    پڑھے لکھے کو فارسی کیا ہے

    جام دیدار اب پلا بھی دو

    حد سے بڑھ کر یہ بے رخی کیا ہے

    یک بہ یک آ گئی فلکؔ سے صدا

    یہ شکایت کی پھلجھڑی کیا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY