پیار کیا تھا تم سے میں نے اب احسان جتانا کیا

احمد ضیا

پیار کیا تھا تم سے میں نے اب احسان جتانا کیا

احمد ضیا

MORE BYاحمد ضیا

    پیار کیا تھا تم سے میں نے اب احسان جتانا کیا

    خواب ہوئیں وہ پیار کی باتیں باتوں کو دہرانا کیا

    راہ وفا ہے ہم سفرو پر عزم رہو ہاں تیز چلو

    چار قدم پہ منزل ہے اب راہ سے واپس جانا کیا

    سنگ زنی و طعنہ زنی اس دور کا شیوہ ہے یارو

    اپنے دل میں کھوٹ نہیں جب دنیا سے گھبرانا کیا

    مے خانے میں دور چلے میں اک اک بوند کو ترسا ہوں

    ساقی بھی ہے میری نظر میں شیشہ کیا پیمانہ کیا

    میرے دل کو توڑ کے آخر کیا کھویا کیا پایا ہے

    شہر صنم میں رہنے والو شیشے سے ٹکرانا کیا

    بستی بستی پربت پربت وحشت کی ہے دھوپ ضیاؔ

    چاروں جانب ویرانی ہے دل کا اک ویرانہ کیا

    مآخذ :
    • کتاب : shahr-e-sanam (Pg. 51)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY