Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

راہ میں میری اگر آئے تو مر جائیں گے آپ

ارتضی نشاط

راہ میں میری اگر آئے تو مر جائیں گے آپ

ارتضی نشاط

MORE BYارتضی نشاط

    راہ میں میری اگر آئے تو مر جائیں گے آپ

    کیا مجھے یوں ہی نظر انداز کر جائیں گے آپ

    ایک پل آسودگی کا ایک لمحہ عشق کا

    مجھ سے ہم آغوش ہوتے ہی نکھر جائیں گے آپ

    سطح پر مجھ کو چھلکنے کی نہ دعوت دیجئے

    ایک قطرہ بھی اگر ٹپکا تو بھر جائیں گے آپ

    اک ادا معصومیت اور ایک تہمت معصیت

    کب تلک بچتے رہیں گے ہم کدھر جائیں گے آپ

    بدشگونی کی علامت پیش خیمہ موت کا

    دیکھیے ہم جان دے دیں گے اگر جائیں گے آپ

    قبر جیسی نا پسندیدہ جگہ بھی ارتضٰیؔ

    دل کبھی ہرگز نہ چاہے گا مگر جائیں گے آپ

    مأخذ:

    Rooh-e-Ghazal,Pachas Sala Intekhab (Pg. 555)

      • اشاعت: 1993
      • ناشر: انجمن روح ادب، الہ آباد
      • سن اشاعت: 1993

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے