روشنی کر دے سر بہ سر مولا

طاہر عدیم

روشنی کر دے سر بہ سر مولا

طاہر عدیم

MORE BYطاہر عدیم

    دلچسپ معلومات

    (اپنے بیٹے سجاول سلطان کے لیے)

    روشنی کر دے سر بہ سر مولا

    اس کی آنکھوں میں نور بھر مولا

    صرف تیرا اسے سہارا ہو

    صرف تیرا ہی اس کو ڈر مولا

    اس کی خوش قسمتی رہے دائم

    اس سے قائم ہے میرا گھر مولا

    اس کی پرواز ہو ثریا تک

    کر دے مضبوط اس کے پر مولا

    نیکیاں ہوں قریب اور قریب

    دور اس سے ہوں سارے شر مولا

    شب تیرہ میں میرے کمسن کے

    حوصلوں کو بلند کر مولا

    یہ مجھے اس قدر ضروری ہے

    جیسے گھر کے لیے ہو در مولا

    بر ضرورت تسلیوں کے لیے

    دوڑ کر آئیں بحر و بر مولا

    صرف کہنا ہے لفظ کن تو نے

    صرف لگنا ہے لمحہ بھر مولا

    حال دل جب بتا دیا تجھ کو

    یوں لگا ہو گئی سحر مولا

    اور جو کچھ نہ کہہ سکا بابا

    کہہ رہی ہے یہ چشم تر مولا

    سب کو یہ کہہ دیا ہے طاہرؔ نے

    میرا کوئی نہیں مگر مولا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے