رفاقت کی یہ خواہش کہہ رہی ہے

ضیاء المصطفیٰ ترکؔ

رفاقت کی یہ خواہش کہہ رہی ہے

ضیاء المصطفیٰ ترکؔ

MORE BY ضیاء المصطفیٰ ترکؔ

    رفاقت کی یہ خواہش کہہ رہی ہے

    کئی دن سے وہ مجھ میں رہ رہی ہے

    پکارا ہے کچھ ایسے نام میرا

    رگوں میں روشنی سی بہہ رہی ہے

    تعجب ہے کہ میری انگلیوں میں

    تری ہاتھوں کی خوشبو رہ رہی ہے

    سمجھ پایا نہیں پر سن رہا ہوں

    وہ سرگوشی میں کیا کیا کہہ رہی ہے

    تری خواہش کسی امکاں کی صورت

    ہمیشہ مجھ میں تہہ در تہہ رہی ہے

    میں اس کی چھاؤں میں ہوں ترکؔ لیکن

    وہ میری دھوپ کیسے سہہ رہی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites