روک دے موت کو بھی آنے سے

شرف مجددی

روک دے موت کو بھی آنے سے

شرف مجددی

MORE BYشرف مجددی

    روک دے موت کو بھی آنے سے

    کون اٹھے تیرے آستانے سے

    بجلیاں گرتی ہیں گریں ہم پر

    ان کو مطلب ہے مسکرانے سے

    ہو مبارک شباب کی دولت

    کچھ تو دلوا لئے خزانے سے

    دخت رز اور تو کہاں ملتی

    کھینچ لائے شراب خانے سے

    جان پر بن گئی شرفؔ آخر

    کیا ملا ہائے دل لگانے سے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY