رخ جو زیر سنبل پر پیچ و تاب آ جائے گا

بہادر شاہ ظفر

رخ جو زیر سنبل پر پیچ و تاب آ جائے گا

بہادر شاہ ظفر

MORE BY بہادر شاہ ظفر

    رخ جو زیر سنبل پر پیچ و تاب آ جائے گا

    پھر کے برج سنبلہ میں آفتاب آ جائے گا

    تیرا احساں ہوگا قاصد گر شتاب آ جائے گا

    صبر مجھ کو دیکھ کر خط کا جواب آ جائے گا

    ہو نہ بیتاب اتنا گر اس کا عتاب آ جائے گا

    تو غضب میں اے دل خانہ خراب آ جائے گا

    اس قدر رونا نہیں بہتر بس اب اشکوں کو روک

    ورنہ طوفاں دیکھ اے چشم پر آب آ جائے گا

    پیش ہووے گا اگر تیرے گناہوں کا حساب

    تنگ ظالم عرصۂ روز حساب آ جائے گا

    دیکھ کر دست ستم میں تیری تیغ آب دار

    میرے ہر زخم جگر کے منہ میں آب آ جائے گا

    اپنی چشم مست کی گردش نہ اے ساقی دکھا

    دیکھ چکر میں ابھی جام شراب آ جائے گا

    خوب ہوگا ہاں جو سینہ سے نکل جائے گا تو

    چین مجھ کو اے دل پر اضطراب آ جائے گا

    اے ظفرؔ اٹھ جائے گا جب پردہ شرم و حجاب

    سامنے وہ یار میرے بے حجاب آ جائے گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY