سب ہوت نہ ہوت سے نتھری ہوئی آسان غزل ہوں چھا کے سنو

رؤف رضا

سب ہوت نہ ہوت سے نتھری ہوئی آسان غزل ہوں چھا کے سنو

رؤف رضا

MORE BYرؤف رضا

    سب ہوت نہ ہوت سے نتھری ہوئی آسان غزل ہوں چھا کے سنو

    کبھی گزرو نور سرا سے میری کبھی مجھ کو مجھ سے چرا کے سنو

    مرا دل بھی کوئی پنگھٹ ہے جہاں پریاں پانی بھرتی ہیں

    کوئی پیڑا نہیں کوئی شور نہیں سب پانی مرا گہرا کے سنو

    دن رات زمین کی گردش پر سر تال بٹھاتے رہتے ہو

    کبھی خود کو بھی حیران کرو کبھی دل کی بات سنا کے سنو

    جو گردن میں اک خم سا ہے یہ کب سے ہوا معلوم نہیں

    یہ شان نشان تو ملتا ہے جب سینے کی پتھرا کے سنو

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    رؤف رضا

    رؤف رضا

    RECITATIONS

    رؤف رضا

    رؤف رضا

    رؤف رضا

    سب ہوت نہ ہوت سے نتھری ہوئی آسان غزل ہوں چھا کے سنو رؤف رضا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY