سب رنگ میں اس گل کی مرے شان ہے موجود

بہادر شاہ ظفر

سب رنگ میں اس گل کی مرے شان ہے موجود

بہادر شاہ ظفر

MORE BY بہادر شاہ ظفر

    سب رنگ میں اس گل کی مرے شان ہے موجود

    غافل تو ذرا دیکھ وہ ہر آن ہے موجود

    ہر تار کا دامن کے مرے کر کے تبرک

    سربستہ ہر اک خار بیابان ہے موجود

    عریانی تن ہے یہ بہ از خلعت شاہی

    ہم کو یہ ترے عشق میں سامان ہے موجود

    کس طرح لگاوے کوئی داماں کو ترے ہاتھ

    ہونے کو تو اب دست و گریبان ہے موجود

    لیتا ہی رہا رات ترے رخ کی بلائیں

    تو پوچھ لے یہ زلف پریشان ہے موجود

    تم چشم حقیقت سے اگر آپ کو دیکھو

    آئینۂ حق میں دل انسان ہے موجود

    کہتا ہے ظفرؔ ہیں یہ سخن آگے سبھوں کے

    جو کوئی یہاں صاحب عرفان ہے موجود

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites