Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

سمجھو کہ ہر بلا سے حفاظت میں کٹ گئی

مجاہد ہادی

سمجھو کہ ہر بلا سے حفاظت میں کٹ گئی

مجاہد ہادی

MORE BYمجاہد ہادی

    سمجھو کہ ہر بلا سے حفاظت میں کٹ گئی

    انسان کی جو رات عبادت میں کٹ گئی

    اس کو سکون مل نہیں سکتا فقیری میں

    عمر دراز جس کی سیاست میں کٹ گئی

    اپنوں کے واسطے میں نے سب کچھ لٹا دیا

    شہ رگ بچی تھی وہ بھی محبت میں کٹ گئی

    قربانی دی ہمیشہ میں نے ملک کے لیے

    گردن بھی میری اس کی حفاظت میں کٹ گئی

    کھوئی ہیں کتنی سنتیں ہم نے حضور کی

    داڑھی بھی اس زمانے کی صحبت میں کٹ گئی

    ہم کو تو چاہیے تھا محبت ہی بانٹتے

    افسوس ہے کہ عمر یہ نفرت میں کٹ گئی

    رب کے حضور حاضری کا جب یقین تھا

    تو کیوں یہ زندگی تری غفلت میں کٹ گئی

    دشوار تھا سفر یوں تو ہادیؔ کے واسطے

    لیکن یہ راہ تیری رفاقت میں کٹ گئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے