صیاد بتا تو سہی اس جال میں کیا ہے

خان جانباز

صیاد بتا تو سہی اس جال میں کیا ہے

خان جانباز

MORE BYخان جانباز

    صیاد بتا تو سہی اس جال میں کیا ہے

    گر دل نہیں میرا تو ترے بال میں کیا ہے

    ویسے تو خود اس چاند کا قائل ہوں میں لیکن

    اک روشنی کو چھوڑ کر اس تھال میں کیا ہے

    مجنوں ہی بتا سکتا ہے لیلیٰ کی فضیلت

    یا سوہنی سے پوچھ کہ مہیوال میں کیا ہے

    میں حشر کے میدان میں کہہ دوں گا محبت

    پوچھے گا خدا جب ترے اعمال میں کیا ہے

    جی کرتا ہے ان کو تری تصویر دکھا دوں

    جو پوچھتے ہیں مجھ سے کہ بنگال میں کیا ہے

    اللہ بنا دے مرے اشکوں کو کبوتر

    سب پوچھ رہے ہیں ترے رومال میں کیا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY