شوق کا سلسلہ بے کراں ہے

فرید جاوید

شوق کا سلسلہ بے کراں ہے

فرید جاوید

MORE BYفرید جاوید

    شوق کا سلسلہ بے کراں ہے

    زندگی کارواں کارواں ہے

    حاصل نرمیٔ شبنم و گل

    آتش غم کا سیل رواں ہے

    ہر نفس میں تری آہٹیں ہیں

    ہر نفس زندگی کا نشاں ہے

    اپنی ویرانیوں پر ابھی تک

    دل کو شادابیوں کا گماں ہے

    ہم نفس دل دھڑکتے ہیں جب تک

    کاروبار محبت جواں ہے

    تہمت مے کشی بھی اٹھائی

    تشنگی ہے کہ شعلہ بجاں ہے

    ان کے دامن میں بھی پھول ہوتے

    جن سے رعنائی گلستاں ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    زمرد بانو

    زمرد بانو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY