شروع سلسلۂ دید کرنے والا تھا

کاوش بدری

شروع سلسلۂ دید کرنے والا تھا

کاوش بدری

MORE BY کاوش بدری

    INTERESTING FACT

    شمارہ 238 جون 2000

    شروع سلسلۂ دید کرنے والا تھا

    تعارف رخ توحید کرنے والا تھا

    خود اس کی زود لسانی نے اس کو گنگ کیا

    وہ میرے حال پہ تنقید کرنے والا تھا

    مزاج یار نے بخشی تھی ایسی یک رنگی

    کہاں میں غیر کی تقلید کرنے والا تھا

    تو منتہا کو پہنچ کر بھی صفر ہے اب تک

    تجھے میں واقف تمہید کرنے والا تھا

    ہماری سال میں دو بار جان جاتی ہے

    وہ شخص روز ہی اک عید کرنے والا تھا

    وہ میرے وعظ سے مسجد میں جب سنبھل نہ سکا

    شراب خانے میں تاکید کرنے والا تھا

    بچا کے فکر کو تلخابۂ توارد سے

    غزل کو خوگر تعقید کرنے والا تھا

    وہ ہم پیالہ بھی تھا خواجہ تاش بھی کاوشؔ

    جو بات بات پہ تردید کرنے والا تھا

    مآخذ:

    • کتاب : Shabkhoon (Urdu Monthly) (Pg. 1572)
    • Author : Shamsur Rahman Faruqi
    • مطبع : Shabkhoon Po. Box No.13, 313 rani Mandi Allahabad (June December 2005áIssue No. 293 To 299âPart II)
    • اشاعت : June December 2005áIssue No. 293 To 299âPart II

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY