صرف خنجر ہی نہیں آنکھوں میں پانی چاہئے

راحت اندوری

صرف خنجر ہی نہیں آنکھوں میں پانی چاہئے

راحت اندوری

MORE BYراحت اندوری

    صرف خنجر ہی نہیں آنکھوں میں پانی چاہئے

    اے خدا دشمن بھی مجھ کو خاندانی چاہئے

    شہر کی ساری الف لیلائیں بوڑھی ہو چکیں

    شاہزادے کو کوئی تازہ کہانی چاہئے

    میں نے اے سورج تجھے پوجا نہیں سمجھا تو ہے

    میرے حصے میں بھی تھوڑی دھوپ آنی چاہئے

    میری قیمت کون دے سکتا ہے اس بازار میں

    تم زلیخا ہو تمہیں قیمت لگانی چاہئے

    زندگی ہے اک سفر اور زندگی کی راہ میں

    زندگی بھی آئے تو ٹھوکر لگانی چاہئے

    میں نے اپنی خشک آنکھوں سے لہو چھلکا دیا

    اک سمندر کہہ رہا تھا مجھ کو پانی چاہئے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    راحت اندوری

    راحت اندوری

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY