تڑپ اٹھوں بھی تو ظالم تری دہائی نہ دوں

احمد فراز

تڑپ اٹھوں بھی تو ظالم تری دہائی نہ دوں

احمد فراز

MORE BYاحمد فراز

    تڑپ اٹھوں بھی تو ظالم تری دہائی نہ دوں

    میں زخم زخم ہوں پھر بھی تجھے دکھائی نہ دوں

    ترے بدن میں دھڑکنے لگا ہوں دل کی طرح

    یہ اور بات کہ اب بھی تجھے سنائی نہ دوں

    خود اپنے آپ کو پرکھا تو یہ ندامت ہے

    کہ اب کبھی اسے الزام بے وفائی نہ دوں

    مری بقا ہی مری خواہش گناہ میں ہے

    میں زندگی کو کبھی زہر پارسائی نہ دوں

    جو ٹھن گئی ہے تو یاری پہ حرف کیوں آئے

    حریف جاں کو کبھی طعن آشنائی نہ دوں

    مجھے بھی ڈھونڈ کبھی محو آئنہ داری

    میں تیرا عکس ہوں لیکن تجھے دکھائی نہ دوں

    یہ حوصلہ بھی بڑی بات ہے شکست کے بعد

    کہ دوسروں کو تو الزام نارسائی نہ دوں

    فرازؔ دولت دل ہے متاع محرومی

    میں جام جم کے عوض کاسۂ گدائی نہ دوں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ہری ہرن

    ہری ہرن

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    تڑپ اٹھوں بھی تو ظالم تری دہائی نہ دوں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY