تمام عمر عذابوں کا سلسلہ تو رہا

جاں نثاراختر

تمام عمر عذابوں کا سلسلہ تو رہا

جاں نثاراختر

MORE BY جاں نثاراختر

    تمام عمر عذابوں کا سلسلہ تو رہا

    یہ کم نہیں ہمیں جینے کا حوصلہ تو رہا

    گزر ہی آئے کسی طرح تیرے دیوانے

    قدم قدم پہ کوئی سخت مرحلہ تو رہا

    چلو نہ عشق ہی جیتا نہ عقل ہار سکی

    تمام وقت مزے کا مقابلہ تو رہا

    میں تیری ذات میں گم ہو سکا نہ تو مجھ میں

    بہت قریب تھے ہم پھر بھی فاصلہ تو رہا

    یہ اور بات کہ ہر چھیڑ لاابالی تھی

    تری نظر کا دلوں سے معاملہ تو رہا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    تمام عمر عذابوں کا سلسلہ تو رہا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY