تنہائی کا علاج یہ مہنگا بہت پڑا

سوربھ شیکھر

تنہائی کا علاج یہ مہنگا بہت پڑا

سوربھ شیکھر

MORE BYسوربھ شیکھر

    تنہائی کا علاج یہ مہنگا بہت پڑا

    اکتا کے میں نے نیوز کا چینل لگایا تھا

    بس یہ کہ وجہ ترک تعلق ہی کچھ رہے

    اس نے ذرا سی بات پہ جھگڑا کھڑا کیا

    بگڑیل ہو چلے تھے کئی دن سے میرے خواب

    سچ کی چھڑی سے شام انہیں سیدھا کر دیا

    کھولا تھا رات ماضی کا ایک البم کہ اف

    یادوں کا میرے ذہن میں تانتا بندھا رہا

    وہ بار بار پوچھ رہا تھا وہی سوال

    مجبور ہو کے جھوٹ مجھے بولنا پڑا

    دریا نے میرے پاؤں اکھاڑے شروع میں

    جب میں ڈٹا رہا تو وہ کمزور پڑ گیا

    تنہائی کا تمہاری تھا ممکن یہی علاج

    گھر کے ہر ایک کونے کو چیزوں سے بھر دیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY